13.5 C
London
Wednesday, July 28, 2021

پاکستان بھارت 2011 ولڈکپ سیمی فائنل

- Advertisement -spot_imgspot_img
- Advertisement -spot_imgspot_img

پاکستان کی بھارت کے خلاف ورلڈکپ سیمی فائنل میں شکست کئی ایسے سوال چھوڑ گئی جس کے جواب ابھی تک کسی کو نہیں مل سکے۔

پاکستان میچ سے پہلے فیورٹ تھا۔ اپنا پول ٹاپ کیا۔ کوارٹر فائینل دس وکٹوں سے جیتا۔ پریشر بظاہر بھارت پر تھا
بھارت نے پہلے بیٹنگ کی۔ اچھے آغاز کے بعد مڈل اوورز میں بھارتی بیٹنگ وہاب ریاض کے تباہی کن سپیل کی بدولت لڑکھڑائی تو اس مشکل وقت میں سچن ٹنڈولکر کی 85 رنز کی اننگز نے اسے سنبھالا دیا۔ 261 رنز کے تعاقب میں پاکستانی ٹیم کو کامران اکمل اور حفیظ نے اچھا آغاز تو فراہم کیا مگر ان کے آؤٹ ہونے کے بعد پاکستانی مڈل آرڈر پریشر برداشت نہ کر پایا اور وقفے وقفے سے وکٹیں گرتی رہیں۔ عمر اکمل، یونس، آفریدی اور رزاق ناکام رہے۔ مصباح 56 رنز کے ساتھ ٹاپ سکورر رہے۔ پاکستانی ٹیم 29 رنز سے میچ ہار گئی۔

اس میچ میں متنازع ترین لمحات بھی آئے۔ پہلا لمحہ وہ جب بھارتی ٹیم پر وہاب ریاض مڈل اوورز میں قہر ڈھا رہا تھا تو اسی دوران سعید اجمل کی ایک سیدھی ڈرفٹر بال ٹنڈولکر کے پیڈ سے ٹکرائی۔ائمپایر نے انگلی فضا میں بلند کر دی۔ سچن نے ریویو لیا اور حیران کن طور پر ٹیکنالوجی نے اس ڈرفٹر گیند کو آف سپن ریڈ کرتے ہوئے اسے اتنا موڈ دیا کہ وہ وکٹوں کو مس کرتی ہوئی گر گئی۔ یوں سچن کو ایک اور زندگی ملی جس نے میچ کا پانسہ پلٹ کر رکھ دیا۔

دوسرا عجیب لمحہ تب آیا جب پاکستان کو چار اوورز میں 56 رنز کی ضرورت تھی مگر مصباح نے اس اوور میں ہٹنگ نہیں کی اور میچ کو مزید ڈیپ لے کر گیا۔ جب مصباح نے ہٹنگ کی کوشش کی تب پاکستان کو دو اوورز میں 45 رنز کی ضرورت تھی جو نا ممکن کے قریب قریب تھا۔

تیسرا سوال یہ تھا کہ آخر اتنے اہم ترین میچ میں سٹار فاسٹ باؤلر شعیب اختر کو کیوں نہ کھلایا گیا جبکہ شعیب اختر کی ٹورنامنٹ میں مںجموعی کارکردگی کافی اچھی جا رہی تھی۔ٹیم مینیجمنٹ کے اعلامیہ کے مطابق شعیب ان فٹ تھا جبکہ شعیب اختر کہ رہا تھا کہ وہ مکمل فٹ ہے۔

- Advertisement -spot_imgspot_img
Ans Hafeez
Writer is blogger and social media activist. He has completed his degree in MS Business Administration. He is a teacher by profession.
Latest news
- Advertisement -spot_img
Related news
- Advertisement -spot_img

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here