13.5 C
London
Thursday, July 29, 2021

عمران خان کی نیت نیتی اور اللہ کی مدد

- Advertisement -spot_imgspot_img
- Advertisement -spot_imgspot_img


اگست 2018کو جب عمران خان نے حکومت سنبھالی تو ملک کی معاشی حالات نہ گفتہ بہ تھے۔ ایک طرف پاکستان تحریک انصاف کے سپورٹر ہونے کے ناطے ہم سب خوش تھے تو دوسری طرف خوف تھا کہ معیشت جس حال میں ہے عمران خان اس قابل ہو سکے گا یا نہیں ۔
ملک تقریبا دیوالیہ ہونےکے قریب تھا ۔ایسے وقت میں حکومت وقت نے کچھ سخت فیصلے کیے جن کا نہ صرف مزاح بنایا گیا بلکہ حکومت کو نا تجربہ کار بھی کہا گیا۔ ایسے فیصلے جو گزشتہ حکومتیں کرنے سے کتراتی تھیں، باڈی النظر میں وہ فیصلے بہت اہمیت کے حامل تھے حالانکہ عوام کو بھی مشکل حالات سے گزرنا پڑا ۔ مگر سب نے یقین کامل سے “گھبرانا نہیں ہے آپ نے” کا دامن تھامے رکھا۔
چنانچہ پہلے دو سال معیشت کو سنبھالنے اور سیدھی راہ پر لگانے میں گزر گئے۔
قرآن پاک میں ارشاد ہے ” اللہ ایک بندے پر اسکی برداشت سے زیادہ بوجھ نہیں ڈالتا ” Quran 2:286
دو سال کے پر خطر راستوں اور بوجھ کے بعد اللہ نے عمران کو سرخرو کیا اور معیشت بحال ہوئ
جس کی تصدیق آئ ایم ایف،جے پی مورگن،اور دوسرے مالیاتی ادارے کر رہے ہیں۔
سال 2020کے لیے آئ ایم ایف نے معیشت کی ترقی کی رفتار کا اندازہ 1.5فیصد لگایا تھا جو اب بڑھ کر 3.94 فیصد ہو گیا ہے۔
جے پی مارگن نے غیر ملکی تاجروں سے کہا ہے پاکستان کی معیشت ترقی کر رہی ہے اور یہ بہترین وقت ہے کہ پاکستان میں سرمایہ کاری کی جائے ۔اور اس سال اللہ پاک کی مدد سے پاکستان کی معیشت کا حجم 329ارب ڈالر کا لگایا جا رہا ہے۔
اللہ پاک شاید انسان کی نیت پر اس کا اجر دیتے ہیں اور جب حکمران اپنی ذات سے بلند ہو کر عوام کی خدمت اور ریاست مدینہ بنانے کی خواہش رکھتے ہوں تو کرونا سمیت جتنے بھی مسائل میں گھری معیشت ہو اللہ کے کن کی منتظر ہوتی ہے۔ آج جس ترقی کی راہ پر پاکستان چل پڑا ہے اس کا سہرا اللہ کی مدد کے ساتھ عمران خان کی نیت کے سر جاتا ہے ۔

- Advertisement -spot_imgspot_img
Latest news
- Advertisement -spot_img
Related news
- Advertisement -spot_img

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here